میڈیا گردی

کل شام ٹی وی پر چینل گردی کرتے ہوئے سماء ٹی وی کا پروگرام “خفیہ آپریشن” نظر سے گذرا، پروگرام کے میزبان کوئی “سجاد سلیم” ہیں، اور محترم کی حرکتیں دیکھ کر یقین کرنا مشکل ہے کہ موصوف خود کو صحافی گردانتے ہیں۔ اس نام نہاد آپریشن میں ایک ملزم کو گرفتار کیا گیا جس...

مکمل تحریر پڑھیں

میں ووٹ نہیں دونگا۔۔۔

میں ایک عام پاکستانی ہوں اور میں اس نظام جمہوریت کو اللہ سے بغاوت اور کفریہ نظام سمجھتا ہوں اس لیے میں ووٹ نہیں دوں گا تاکہ قوم کے ذلیل ترین افراد ایک مرتبہ پھر حکمران بن کر مجھ پر مسلط ہو جائیں، اور میں گزشتہ پانچ سال جس صورتحال سے گزرا، آئندہ پانچ سالوں...

مکمل تحریر پڑھیں

توجہ فرمائیے۔۔۔

میرے سامنے اس وقت حزب التحریر کا ایک پمفلٹ پڑا ہے۔ ہماری مسجد کے باہر ہر جمعہ کو کوئی نہ کوئی خلافتی ایک اے فور سائز کے کاغذ میں اردو میں پرنٹ کیا ہوا مواد مجھے تھمادیتا ہے۔ اور اب تو یہ حال ہے کہ میں اس کے ہاتھ سے پمفلٹ لینے سے پہلے ہی...

مکمل تحریر پڑھیں

سب مایا ہے

کہتے ہیں کہ کتے کی دم اگر سو سال بھی نلکی میں رکھی جائے تو پھر بھی وہ ٹیڑھی ہی رہتی ہے۔ اس محاورے کی حقیقت تک پہنچنے کی نہ ہم میں ہمت ہے اور نہ وقت کہ تجربہ کربیٹھیں لیکن اس مختصر سی زندگی میں بھی حالات و واقعات کو دیکھنے کے بعد اس...

مکمل تحریر پڑھیں

شہید تیرا قافلہ رکا نہیں تھما نہیں

اللہ کے بندوں کے لیے اللہ کا قانون ہی برحق ہے۔ باقی سارے قانون جھوٹے، غیر اسلامی، طاغوتی اور منسوخ کئے جانے کے قابل ہیں۔ ان الحکم الا للہ ————– بادشاہی صرف اللہ ہی کے لیے ہے اور زمین پر اللہ کے حکم سے بے نیاز اور آزاد قائم کی ہوئی بادشاہتیں دراصل ناجائز، باغیانہ...

مکمل تحریر پڑھیں

میں، میرا شہر اور پاک بھارت کرکٹ سیمی فائنل

جیسے جیسے موہالی میں ہونے والے پاکستان اور بھارت کے درمیان دوسرے سیمی فائنل کی تاریخ قریب آنے لگی۔ قوم کے جوش و خروش میں بے پناہ اضافہ ہونے لگا۔ جسے دیکھو کرکٹ کے بخار میں مبتلا نظر آتا تھا۔ گلی محلوں سے لیکر ٹی وی ٹاک شوز تک ہر جگہ موضوع بحث پاک بھارت...

مکمل تحریر پڑھیں

کاش ہمیں بھی کوئی خمینی مل جائے!

اسلام آباد میں گورنرپنجاب سلمان تاثیر کی ہلاکت کے بعدسے ہی نام نہادروشن خیال اور مغرب کے دلال اسے لبرل ازم پر وار قرار دے رہے ہیں۔ کوئی اسے شٹ اپ کال لکھتا ہے اور کوئی اسے روشن خیالی کا قتل قرار دے رہا ہے۔ کسی نے اسے برداشت کی موت کہا تو کوئی اس...

مکمل تحریر پڑھیں

بوڑھی گنگا کے کنارے۔۔۔۔

مئی 2009 میں جب یہاں کراچی میں گرمی اپنے جوبن پر تھی مجھے ڈھاکہ چلنے کی پیشکش ہوئی۔ ڈھاکہ جو کبھی اپنا شہر تھا،  سابق مشرقی پاکستان اور اب بنگلہ دیش کا دارالحکومت۔   ہوا کچھ یوں کہ ہمارے دوست عبدالرحمٰن کی شادی ڈھاکہ میں سکونت پذیر ان کے چچا کی بیٹی سے طے پاگئی تھی...

مکمل تحریر پڑھیں

روشن خیالیے

آج کل ہر طرف دو چیزوں کا خوب چرچا ہے۔ ایک توہین رسالت کا قانون اوردوسرا ریفامڈ جی ایس ٹی۔ ہماری سیاسی جماعتیں تو آر جی ایس ٹی کے معاملے میں بیغیرتی کی حد تک جوڑ توڑ میں لگی ہیں لیکن بھونچال تو شاید توہین رسالت کے قانون پر آیا ہوا ہے۔ بھانت بھانت کی...

مکمل تحریر پڑھیں